نامعلوم افراد خاتون وکیل کو میلسی میں پھینک کر فرار

14 اگست کی صبح 4 افراد نے دفتر سے اغواء کیا: خاتون وکیل ارشاد کی کلک نیوز سے گفتگو
خاتون وکیل پر ظلم اور غواء کی مذمت کرتے ہیں ، میلسی بار ایسوسی ایشن کا غم و غصہ کا اظہار
میلسی(رپورٹ: فرخ خیرپوری ایڈووکیٹ ) دیپالپور کی رہائشی خاتون وکیل ارشاد کو نا معلوم افراد میلسی تھانہ سٹی کی حدود میں پھینک کر فرار ہو گئے، گزشتہ شب میلسی میں خاتون وکیل ارشاد ایڈووکیٹ کے ہاتھ بندھے ہوئے روڈ کنارے پھینک دیا گیا ، کلک نیوز کے نمائندے سے گفتگو کرتے ہوئے خاتون وکیل نے بتایا کہ وہ 14 اگست کی صبح اپنے دفتر موجود تھیں کہ 4 افراد نے انہیں اغواء کر لیا اور تشدد کا نشانہ بنایا اور رات گئے میلسی تھانہ سٹی کی حدود میں پھینک دیا گیا موقع پر موجود شہریوں نے پولیس حکام کو بروقت اطلاع کی اور تھانہ سٹی پولیس نے خاتون وکیل کو ورثاء کے حوالے کر دیا۔ اس موقع پر میلسی بار ایسوسی ایشن کے وکلاء نے افسوس ناک واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ حکومت وکلاء کو تحفظ دینے میں ناکام ہو چکی آئے روز وکلاء پر تشدد اور اغواء کے واقعات حکومتی نا اہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے ، میلسی بار کے سابق نائب صدر فرخ ممتاز خیر پوری،جنرل سیکرٹری میلسی بار ناصر ممتاز ایڈوکیٹ،رضوان بھٹی ایڈوکیٹ، قیصر ممتاز ایڈوکیٹ، ذوالفقار بھٹی ایڈوکیٹ،میاں احسن بورانہ،میاں غوث اقبال قاضی،میاں فہیم اقبال، رانا ظہور الحق،رائو ظفر اقبال،میاں جہانگیر نذیر، میاں آصف محفوظ ایڈوکیٹ سمیت وکلاء برادری نے خاتون ایڈوکیٹ کے حق میں مظاہرہ کرتے ہوئے حکومت سے شفاف تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے اور کہا ہے کہ ملزمان کو فوری گرفتار کیا جائے اور کیفر کردار تک پہنچایا جائے بصورت دیگر ملک بھر میں وکلاء سڑکوں پر نکلنے پر مجبور ہونگے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں